Select your Top Menu from wp menus
غزل
  • یہ عبادت بھی کیا عبادت ہے

    جو بھی دل صاحبِ صداقت ہے اْس سے ملنا بھی اِک عبادت ہے مخملی فرش، مرمری مسجد یہ عبادت بھی کیا عبادت ہے! ہر ...

    جو بھی دل صاحبِ صداقت ہے اْس سے ملنا بھی اِک عبادت ہے مخملی فرش، مرمری مسجد یہ عبادت بھی کیا عبادت ہے! ہر سیاست کے پیچھے مولانا یہ عبادت ہے یا سیاست ہے؟ میں تو محروم میرے حق سے ہوں کب خوشامد کی مجھ کو ...

    Read more
  • عکس میرا چور ہونے کے سوا کچھ بھی نہیں

    **** زندگی اِک خارداری رہ سوا کچھ بھی نہیں میں گلوں کو ڈھونڈتا تھا پر ملا کچھ بھی نہیں حادثوں کے آئینے می ...

    **** زندگی اِک خارداری رہ سوا کچھ بھی نہیں میں گلوں کو ڈھونڈتا تھا پر ملا کچھ بھی نہیں حادثوں کے آئینے میں روز تکتا تھا مگر عکس میرا چور ہونے کے سوا کچھ بھی نہیں دامنِ تر کہہ گیا تھا داستانِ زندگی راز ...

    Read more
  • غزل

    عبدالرب حماد پھلتی درد بھی آج تو حیراں ہے خدا خیر کرے قلب مظطر بھی پریشان ہے خدا خیر کرے جام چھلکیں ہیں گ ...

    عبدالرب حماد پھلتی درد بھی آج تو حیراں ہے خدا خیر کرے قلب مظطر بھی پریشان ہے خدا خیر کرے جام چھلکیں ہیں گھٹا امڈی ہے موسم پر کیف زلف جاناں بھی پریشاں ہے خدا خیر کرے سجدے کرنے کو چلے تو ہیں حرم میں لیک ...

    Read more
  • نظم

    محمد عبّاس دھالیوال، مینیجر اسلامیہ گرلز کالج ، مالیر کوٹلہ،پنجاب منصفِ وقت تو ہی بتا اے منصفِ وقت تو ہی ...

    محمد عبّاس دھالیوال، مینیجر اسلامیہ گرلز کالج ، مالیر کوٹلہ،پنجاب منصفِ وقت تو ہی بتا اے منصفِ وقت تو ہی بتا ہے دور یہ کیساآیا آج۔! اوراقِ تاریخ میں اس سے قبل دیکھا نہ کبھی ہے پہلے سنا تھے عوامی جھگڑو ...

    Read more
  • غزل **** حیرت ہے کہ ہر آدمی ناکام بہت ہے

    افکار میں یہ شعلۂ گلفام بہت ہے آشفتہ سرِ دل مِرا بدنام بہت ہے جنبش تو شب و روز کیا کرتا ہے لیکن حیرت ہے ک ...

    افکار میں یہ شعلۂ گلفام بہت ہے آشفتہ سرِ دل مِرا بدنام بہت ہے جنبش تو شب و روز کیا کرتا ہے لیکن حیرت ہے کہ ہر آدمی ناکام بہت ہے اب وصل کی چاہت ہے نہ دیدار کی حسرت میرے دلِ غمگیں کو تِرا نام بہت ہے اب ...

    Read more
  • غزل :چاہتِ زیست لیے جیتے ہیں مر جاتے ہیں

    ہم بھی گمنام کسی نام پہ مرجاتے ہیں اور مر کر بھی تِرا نام ہی کر جاتے ہیں جانے کس نام سے رشتوں کو نبھانا ہ ...

    ہم بھی گمنام کسی نام پہ مرجاتے ہیں اور مر کر بھی تِرا نام ہی کر جاتے ہیں جانے کس نام سے رشتوں کو نبھانا ہے ہمیں اور کس نام سے ایام گذر جاتے ہیں وقت کی شام کسی نے نہیں دیکھی لیکن شام کا وقت تِرے نام ہی ...

    Read more
  • نظم

    از: محمد عباّس دھالیوال مالیر کوٹلہ، پنجاب. پہلی صبح بنام آخری شام۔۔! گزرتے سال کی آخری شام تجھے میرا سلا ...

    از: محمد عباّس دھالیوال مالیر کوٹلہ، پنجاب. پہلی صبح بنام آخری شام۔۔! گزرتے سال کی آخری شام تجھے میرا سلام..! سال نو کی دہلیز تک پہنچانے کا ، تیرا بڑا احسان ۔۔! آخری شام... تجھ سے مجھے کوئی شکوہ نہیں ...

    Read more
  • جانِ گل

           گل بخشالوی   جانِ گل آج ترے حسن کی تعریف کروں  سرخ گالوں کی یہ سرخی ہے کہ کابل کا انار  گول چہرے پ ...

           گل بخشالوی   جانِ گل آج ترے حسن کی تعریف کروں  سرخ گالوں کی یہ سرخی ہے کہ کابل کا انار  گول چہرے پہ یہ ابرو ہیں کہ ارجن کی کمان  مست آنکھوں کے کٹورے ہیں کہ خیام کے جام  اور پلکوں کے یہ جگنو ہیں ...

    Read more
  • غربت نے میری صبر کا چہرہ پہن لیا

    یہ آسمانِ عقل بھلا کیا پہن لیا تاروں کی جستجو میں اندھیرا پہن لیا ظلمت کو ڈھیر کرکے اجالا پہن لیا دھاگا ش ...

    یہ آسمانِ عقل بھلا کیا پہن لیا تاروں کی جستجو میں اندھیرا پہن لیا ظلمت کو ڈھیر کرکے اجالا پہن لیا دھاگا شمع کا جیسے شرارہ پہن لیا بھوکے شکم نے پھر سے لبادہ پہن لیا ننگے سروں نے جیسے عمامہ پہن لیا سارا ...

    Read more
  • نظم روہنگیا

    روہنگیا! تم اس طرح مارے گئے کاٹے گئے میں چپ رہا روہنگیا !بولو نہ کچھ تم کو بھی کیوں چپ لگ گئی کیوں اس طرح ...

    روہنگیا! تم اس طرح مارے گئے کاٹے گئے میں چپ رہا روہنگیا !بولو نہ کچھ تم کو بھی کیوں چپ لگ گئی کیوں اس طرح روٹھے ہو تم بولو مرے روہنگیا! میں کیا کروں روہنگیا! مجھ سے میرے ابا بھی اب ناراض ہیں ان کی لحد ...

    Read more